فلسطین اسرائیل تنازع

سعودی ولی عہد کا فلسطینیوں کے حقوق کی خاطر امن عمل دوبارہ شروع کرنے پر زور

شہزادہ محمد نے گفتگو میں غزہ کا محاصرہ ختم کرنے بنیادی خدمات کے تحفظ، انسانی اور طبی امداد کی فراہمی کی اجازت دینے پر زور دیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

شہزادہ محمد بن سلمان نے امریکہ پر زور دیا کہ’وہ اسرائیل کی فوجی کارروائیوں کو روکنے کے طریقوں پر فوری طور پر کام کرے جس نے بے گناہ لوگوں کی جانیں لی ہیں‘۔

ان خیالات کا اظہار سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان نے امریکہ کے صدر جو بائیڈن کی منگل کے روز موصول ہونے والی ٹیلی فون کال کے دروان کیا۔

مملکت کی سرکاری خبر رساں ایجنسی ’’ایس پی اے‘‘ کے مطابق رابطے کے دوران غزہ میں جاری فوجی کشیدگی اور اس حوالے سے کی جانے والی کوششوں پر تبادلہ خیال کیا گیا۔

امریکی صدر جو بائیڈن کی جانب سے موصول ہونے والی فون کال کے دوران سعودی ولی عہد نے غزہ میں جاری فوجی کشیدگی اور حماس کی جانب سے سات اکتوبر کو اسرائیل پر اچانک حملے کے بعد شروع ہونے والی جنگ کے خاتمے کےلیے کی جانے والی کوششوں پر بات چیت کی۔

سعودی ولی عہد نے فلسطینی عوام کو ان کے جائز حقوق، منصفانہ اور جامع امن کے حصول کو یقینی بنانے کےلیے امن کے راستے کی بحالی کی اہمیت بھی اجاگر کی۔

سعودی ولی عہد نے شہریوں کو کسی بھی طرح سے نشانہ بنانے، انفراسٹریکچر یا اہم مقامات کو ٹارگٹ کرنے کو مسترد کرنے کا حل تلاش کرنےکی ضرورت پر بھی زور دیا جس سے ان کی روز مرہ زندگی متاثر یا جبری نقل مکانی ہوتی ہے۔

انہوں نے پرامن رہنے، کشیدگی کو روکنے اور اسے اس طرح خراب نہ ہونے دینے کی ضرورت پر زور دیا جس سے خطے کی سلامتی اور استحکام متاثر ہو۔

بین الاقوامی انسانی قوانین کی پاسداری، غزہ کا محاصرہ ختم کرنے بنیادی خدمات کے تحفظ، انسانی اور طبی امداد کی فراہمی کی اجازت دینے پر زور دیا۔

صدر جو بائیڈن نے کشیدگی کو کم کرنے اور خطے میں اسے پھیلنے سے روکنے کے لیے کی جانے والی کوششوں پر سعودی ولی عہد کا شکریہ ادا کیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں