حملہ آور غیر ملکی ہیں: روس، تعلق تاجکستان سے ہونے کی اطلاعات

دہشت گردانہ حملہ کرنےوالے چاروں ملزموں کو گرفتار کرلیا، یوکرین جانے کی کوشش کر رہے تھے: پوتین

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

روسی وزارت داخلہ نے تصدیق کی ہے کہ ماسکو کے مضافاتی علاقے میں جمعے کے روز کنسرٹ ہال پر حملہ کرنے والے مشتبہ افراد غیر ملکی شہری تھے۔ اس حملے کی ذمہ داری داعش نے قبول کی تھی۔ وزارت نے ایک بیان میں کہا ہے کہ جن چار مشتبہ افراد کو گرفتار کیا گیا ہے وہ "غیر ملکی شہری" ہیں۔ وزارت نے گرفتار افراد کی قومیتوں کی وضاحت نہیں کی۔ روسی میڈیا اور ایک روسی رکن پارلیمان نے پہلے تصدیق کی تھی کہ کچھ مشتبہ افراد کا تعلق تاجکستان سے ہے۔

روس میں ہونے والے حملہ کے بعد کا منظر
روس میں ہونے والے حملہ کے بعد کا منظر
Advertisement

ادھر ماسکو میں صحت کے حکام نے اعلان کیا ہے کہ کروکس سٹی ہال میں دہشت گردی کی کارروائی کے نتیجے میں ہلاکتوں کی تعداد 140 ہو گئی ہے۔ روسی صدر پوتین نے اس حملے کو "خونی دہشت گردانہ حملہ" قرار دیا اور کہا دہشت گردی کرنے والے تمام مجرم مل گئے ہیں۔ لوگوں کو فائرنگ کرکے قتل کرنے والے تمام افراد کو گرفتار کرلیا گیا ہے۔

انہوں نے کہا ابتدائی معلومات کے مطابق ملزمان نے چھپنے کی کوشش کی اور یوکرین کی طرف بڑھے۔ یوکرین کی طرف ان کے لیے ملک کی سرحدوں کو عبور کرنے کے لیے ایک 'کوریڈور' تیار تھا۔

روسی صدر نے کہا کہ ان قاتل اور انسانیت سوز جرم کرنے والے دہشتگردوں کی کوئی قومیت نہیں ہے، ان کا تعلق کسی قوم سے نہیں ہوسکتا، ان کو ناقابل تلافی انجام اور انتقام کا سامنا کرنا ہوگا، ان کا کوئی مستقبل نہیں ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ تفتیش اور قانون نافذ کرنے والے ادارے جرم کی تمام تفصیلات کا تعین کرنے کی ہر ممکن کوشش کریں گے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں