.

مقبوضہ بیت القدس کی شاہراہ ام کلثوم کے نام سے موسوم

سڑک کا افتتاح القدس کے میئر کریں گے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مقبوضہ بیت المقدس کے میئر نیر برکات کا کہنا ہے کہ بدھ کے روز شہر کی ایک نئی شاہراہ کے افتتاح کی تقریب منعقد ہو گی۔ اس شاہراہ کو عرب دنیا کی مشہور اور خوش گلو صداکار 'کوکب الشرق' ام کلثوم کے نام سے موسوم کیا گیا ہے۔ ام کلثوم اس دنیا سے پردے کے 37 برس بعد القدس کی مہمان ہوں گی، جہاں جانے کی نوید وہ عرب اور فلسطینیوں کو اپنے نغموں کے ذریعے سناتی رہی ہیں۔

العربیہ ٹی وی نے اسرائیلی اخبار 'یروشلم پوسٹ' کے حوالے سے اپنی رپورٹ میں بتایا ہے کہ سنہ 2011ء میں ایک خصوصی منصوبے کے تحت قرار پایا تھا کہ شاہراوں کے نام شہروں کے بجائے مشہور شخصیات کے ناموں پر رکھیں جائیں گے۔ گزشتہ برس القدس شہر کے میئر نے شہر کی 145 شاہراوں کے نئے نام رکھنے کی منظوری دی تھی۔

اسی ضمن میں القدس کی ایک شاہراہ کو عرب دنیا کی ملکہ ترنم ام کلثوم سے موسوم کیا جا رہا ہے تاکہ وہ عرب اور القدس کے فلسطینیوں کے ذہنوں میں زندہ رہیں۔

انکا مشہور ملی نغمہ 'الآن الآن لیس غدا' فلسطینیوں کے وطن واپسی کے حق کی انتہائی جذباتی تعبیر ہے جس میں وہ کہتی ہیں کہ القدس اور فلسطین واپسی کل کے بجائے آج ہی ہو گی۔ آج ہی اجراس العودہ [واپسی کی گھنٹیوں] کا آہنگ بلند کیا جائے، آج بھی فلسطینیوں کے دلوں کو گرماتا ہے۔

کوکب الشرق کے لقب سے مشہور ہونے والی 'ام کلثوم' 30 دسمبر 1898ء کو پیدا ہوئیں۔ انہوں نے اپنی منفرد گائیکی سے تادیر عربوں کے دلوں کو گرمایا۔ ان کے طربیہ نغمے فلسطینیوں اور عربوں کو آج بھی زبانی یاد ہیں۔ عرب بہاریہ میں یہی طربیہ نغمے متعدد ملکوں میں انقلابی کارکنوں کے جذبوں کو مہمیز لگاتے رہے۔