.

نئی مصری کابینہ میں سیسی بدستور وزیر دفاع رہیں گے

مستعفی وزراء محمد ابراہیم، شریف اسماعیل اور اشرف العربی کو برقرار رکھنے کا اعلان

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مصر کے آرمی چیف فیلڈ مارشل عبدالفتاح السیسی نئی حکومت میں بھی بدستور وزیر دفاع کے منصب پر فائز رہیں گے۔

مصر کے ایک سرکاری ذریعے نے برطانوی خبر رساں ادارے رائٹرز کو بتایا ہے کہ ''وہ (سیسی) انتخابی قوانین سے متعلق تمام ایشوز طے ہونے تک اپنے عہدے (وزیر دفاع) پر کام کرتے رہیں گے''۔

فیلڈ مارشل عبدالفتاح السیسی کے بارے میں یہ توقع کی جا رہی ہے کہ وہ بہت جلد صدارتی انتخاب لڑنے کا اعلان کر دیں گے۔ انھوں نے اگر صدارتی انتخاب لڑا تو ان کی کامیابی یقینی نظر آ رہی ہے۔ تاہم انھیں اس سے قبل وزیر دفاع کا منصب چھوڑنا ہو گا۔

مصر کے نامزد وزیر اعظم ابراہیم محلب نے سبکدوش ہونے والی کابینہ میں سے تین وزراء کو اپنی نئی حکومت میں شامل کر لیا ہے۔ انھوں نے وزیر داخلہ محمد ابراہیم، وزیر تیل شریف اسماعیل اور وزیر منصوبہ بندی اشرف العربی کو ان کے عہدوں پر برقرار رکھنے کا فیصلہ کیا ہے لیکن انھوں نے وزیر دفاع فیلڈ مارشل عبدالفتاح السیسی کے بارے میں کوئی اعلان نہیں کیا ہے۔

مصر کے عبوری صدر عدلی منصور نے حازم الببلاوی کی کابینہ کے اچانک استعفے کے بعد منگل کو سبکدوش وزیر مکانات ابراہیم محلب کو وزیر اعظم نامزد کر کے نئی حکومت بنانے کی دعوت دی تھی۔

انھوں نے اپنی نامزدگی کے فوری بعد نیوز کانفرنس میں کہا تھا کہ وہ تین سے چار روز میں اپنی کابینہ تشکیل دے لیں گے اور ان کی کابینہ کے ارکان مصری عوام کی خدمت مجاہد کے طور پر انجام دیں گے۔ملک میں امن وامان کی بحالی ان کی کابینہ کی اولین ترجیح ہو گی اور ملک کے کونے کونے سے دہشت گردی کو جڑ سے اکھاڑ پھینکا جائے گا۔

ابراہیم محلب کو جولائی 2013ء میں منتخب صدر ڈاکٹر محمد مرسی کی برطرفی کے بعد تشکیل پانے والی عبوری کابینہ میں وزیر مکانات بنایا گیا تھا اور وہ سابق مطلق العنان صدر حسنی مبارک کی کالعدم جماعت نیشنل ڈیموکریٹک پارٹی کے سابق عہدے دار بھی رہے تھے۔

وہ پیشے کے اعتبار سے سول انجینیر ہیں اور وہ مصر کی سب سے بڑی سول انجینیرنگ فرم عرب کنٹریکٹرز کمپنی کے چئیرمین اور چیف ایگزیکٹو آفیسرز رہ چکے ہیں۔ وہ انگریزی اور فرانسیسی زبانیں روانی سے بول سکتے ہیں۔