.

حزب اللہ کی چوکی پر خودکش حملہ، تین افراد ہلاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

لبنان کے مشرقی شہر بعلبک میں شیعہ ملیشیا حزب اللہ کی ایک سکیورٹی چیک پوسٹ پر کار سوار خودکش بمبار کے حملے میں کم سے کم تین افراد ہلاک اور متعدد زخمی ہو گئے ہیں۔

العربیہ کے نامہ نگار کے مراسلے کے مطابق یہ واقعہ ہفتے کی شب اس وقت پیش آیا جب ایک نامعلوم کار سوار نے بارود سے بھری کار حزب اللہ کی ایک چیک پوسٹ سے ٹکرا دی جس کے نتیجے میں کم سے کم تین افراد ہلاک ہوئے ہیں تاہم حزب اللہ کے ترجمان ٹی وی "المنار" نے دعویٰ کیا ہے کہ حملے میں ‌کسی قسم کا جانی نقصان نہیں‌ ہوا ہے۔

لبنان کی سرکاری خبر رساں ایجنسی نے بھی خودکش کار حملے کی تصدیق کرتے ہوئے بتایا کہ دھماکے میں کم سے کم تین افراد ہلاک اور متعدد زخمی ہوئے ہیں۔ تاہم یہ معلوم نہیں ‌ہو سکا کہ مرنے والوں میں حزب اللہ کا کوئی رکن بھی شامل ہے یا نہیں۔

خبر رساں ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق ایک نامعلوم خودکش بمبار نے بارود سے بھری کار حزب اللہ کے زیر انتظام ایک سیکیورٹی چیک پوسٹ سے ٹکرائی۔ عین اسی وقت ایک موٹر سائیکل بھی وہاں سے گذر رہا تھا۔

خیال رہے کہ یہ دھماکے ایک ایسے وقت میں ہواہے جب شام میں‌ القاعدہ کی ذیلی تنظیم النصرہ فرنٹ نے یرغمال بنائے گئے ایک لبنانی فوجی کو قتل کر دیا ہے۔ فوجی کے قتل کے بعد لبنان کی وادی البقاع میں سخت کشیدگی اور غم وغصہ کی فضاء پائی جا رہی ہے۔

شام میں صدر بشار الاسد کی معاونت میں ‌لڑنے والی تنظیم حزب اللہ اور کی النصرہ فرنٹ، دولت اسلامی عراق و شام "داعش" اور دیگر سنی عسکری گروپوں کے ساتھ بھی لڑائی جاری ہے۔ شام میں بشار الاسد مخالف عسکری گروپوں کا مطالبہ ہے کہ حزب اللہ شام کی جنگ سے نکل جائے تاہم حزب اللہ کا دعویٰ ہے کہ وہ صدر بشارالاسد کی حمایت میں آخری مرحلے تک لڑتی رہے گی۔