حلب میں چار اسپتالوں پر شامی اور روسی طیاروں کے فضائی حملے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

شام کے شمالی شہر حلب میں گذشتہ چوبیس گھنٹے کے دوران چار اسپتالوں اور ایک مقامی بلڈ بنک کو فضائی حملوں میں نشانہ بنایا گیا ہے۔

حلب میں شامی ڈاکٹروں کی ایک تنظیم نے بتایا ہے کہ اسدی فوج اور روس کے لڑاکا طیاروں نے یہ فضائی حملے کیے ہیں۔شہر کے محاصرہ زدہ مشرقی حصے میں بچوں کے ایک اسپتال پر بمباری سے دو سالہ بچہ جاں بحق ہوگیا ہے۔اسپتال پر فضائی حملے کے بعد اس بچے کو آکسیجن مہیا کرنے کا سلسلہ منقطع ہوگیا تھا۔تنظیم کے مطابق گذشتہ نو گھنٹے میں اس اسپتال پر یہ دوسرا حملہ تھا۔

تنظیم نے اپنے بیان میں ڈاکٹروں سے کہا ہے کہ وہ اپنا اور زیرعلاج بچوں کا تحفظ کریں۔حلب کے باغیوں کے زیر قبضہ مشرقی حصے میں واقع بچوں کے اسپتال کے علاوہ البیان ،الزہرا اور الدقاق اسپتال پر بمباری کی گئی ہے۔تنظیم کے مطابق طبی مراکز پر حملوں میں اضافے کے پیش نظر اب ان کے لیے مریضوں اور زخمیوں کو طبی سہولتیں مہیا کرنا مشکل ہوجائے گا۔

عالمی ادارہ صحت (ڈبلیو ایچ او) کا کہنا ہے کہ شام گذشتہ سال طبی کارکنان کے کام کے حوالے سے دنیا میں سب سے خطرناک جگہ بن گیا تھا اور 2015ء میں مراکز صحت پر 135 حملے کیے گئے تھے۔

حالیہ مہینوں کے دوران حلب کے گنجان آباد مشرقی حصے میں متعدد اسپتالوں کو فضائی حملوں میں نشانہ بنایا گیا ہے جس سے طبی عملے کے بیسیوں ارکان ہلاک اور زخمی ہوئے ہیں۔آٹھ روز قبل حلب کے مشرقی علاقے معدی میں ایک اسپتال پر بمباری سے عملے کے بعض ارکان اور زیر علاج مریض زخمی ہوگئے تھے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں