موصل کے جنوب میں داعش کے گڑھ "الشورة" پر پولیس کا دھاوا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

عراق میں وفاقی پولیس نے ہفتے کے روز جاری بیان میں بتایا ہے کہ اس کی فورسز نے موصل کے جنوب میں واقع داعش کے گڑھ ناحیہ الشورہ پر چار محوروں سے حملہ کر دیا ہے۔ بیان میں باور کرایا گیا ہے کہ داعش تنظیم کمزور مذکورہ علاقے میں کمزور پڑ کر اپنے دفاعی ٹھکانوں کو چھوڑ رہی ہے۔

پولیس کا مزید کہنا ہے کہ ناحیہ الشورہ کے ایک نواحی گاؤں عین النصر کو آزاد کرالیا گیا ہے جب کہ کارروائی کے دوران 5 دہشت گردوں کو ہلاک اور گولہ بارود سے بھری 3 گاڑیوں کو تباہ کر دیا گیا۔

ادھر اسپیشل آپریشنز کے کمانڈر بریگیڈیئر جنرل معن السعدی نے بتایا ہے کہ دعاش سے آزاد کرائے جانے والے علاقوں کو "دیگر فورسز" کے حوالے کیا جا رہا ہے تاکہ امن برقرار رکھا جا سکے اور شدت پسندوں کی دوبارہ واپسی کے سامانے روک لگائی جاسکے۔

السعدی کے مطابق نویں آرمرڈ بریگیڈ نے جنوب کی سمت سے موصل کے مرکز کی جانب پیش قدمی کا آغاز کر دیا ہے اور شمالی محور داعش کے ارکان کے سامنے مکمل طور پر بند رکھا گیا ہے جب کہ ان کی فورسز شہر میں داخلے کے مشرقی راستوں پر کھڑی ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں