.

اسرائیل پر فلسطینی علاقوں میں آباد کاری کا جنون سوار ہے: یو این

یہودی آباد کاری عالمی قراردادوں کی کھلی خلاف ورزی ہے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مشرق وسطیٰ کے لیے اقوام متحدہ کے خصوصی مندوب نے فلسطین میں اسرائیل کی طرف سے جاری غیرقانونی یہودی بستیوں کی تعمیرپر شدید تنقید کی ہے۔ یو این مندوب کا کہنا ہے کہ اسرائیل فلسطین میں یہودی بستیوں کی تعمیر جاری رکھ کر عالمیق قراردادوں کی کھلی خلاف ورزی کا مرتکب ہو رہا ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق اقوام متحدہ کے مندوب نیکولائے ملادینوف نے ان خیالات کا اظہار گذشتہ روز اپنے دورہ فلسطین کے موقع پر ایک پریس کانفرنس سے خطاب میں کیا۔ ملادینوف گذشتہ روز غرب اردن اور غزہ کی پٹی میں بھی گئے جہاں انہوں نے جاری بحالی کے کاموں کا بھی جائزہ لیا۔

’یو این‘ مندوب کا کہنا تھا کہ اسرائیل نے فلسطین کے علاقوں مقبوضہ مغربی کنارے اور مشرقی بیت المقدس میں یہودی آباد کاری کی سرگرمیوں میں غیر معمولی اضافہ کردیا ہے۔

انہوں نے اسرائیلی وزیراعظم بنجمن نیتن یاھو کی پالیسیوں کو کڑی تنقید کا نشانہ بنایا اور کہ نیتن یاھو فلسطینی علاقوں میں غیرقانونی یہودی بستیوں کی تعمیر کے لیے یہودیوں کو ترغیب دے رہے ہیں۔

ملادینوف نے کہا کہ ستمبر کے مہینے میں اسرائیلی حکومت نے یہودی آباد کاروں کے لیے 2300 نئے مکانات کی تعمیر کی منظوری دی ہے جو گذشتہ سال کے عرصے کی نسبت 30 فی صد زیادہ ہے۔

یو این مندوب نے کہا کہ فلسطین میں یہودی آباد کاری کا جنون انتہائی خطرناک ہے۔ پورا سال یہودی بستیوں کی تعمیر اور ان کی توسیع نہ صرف غیرآئینی بلکہ خطے میں امن وامان کے قیام کے لیے کی جانے والی مساعی کے لیے بھی خطرہ ہے۔