شام : داعش کے حملوں میں بشار کی فورسز کے درجنوں عناصر ہلاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

شام میں انسانی حقوق کے سب سے بڑے نگراں گروپ المرصد کے اعلان کے مطابق جمعرات کے روز ملک کے وسطی علاقوں بالخصوص حمص صوبے میں چیک پوائنٹس پر داعش تنظیم کے سلسلہ وار حملوں میں بشار کی فورسز کے 58 ارکان مارے گئے۔

تنظیم نے انٹرنیٹ پر جاری بیان میں حملوں کی ذمے داری قبول کر لی ہے۔ یہ کارروائیاں داعش کے سربراہ ابو بکر البغدادی سے منسوب پیغام سامنے آنے کے بعد کی گئی ہیں جس میں اُس نے اپنے حامیوں سے حملوں کا مطالبہ کیا تھا۔

المرصد نے بتایا کہ ابتدائی حملوں میں دیر الزور شہر کے نزدیک "الشولا" میں بشار فوج کے زیر کنٹرول علاقوں کو نشانہ بنایا گیا۔

مذکورہ علاقے میں داعش تنظیم کو مار بھگانے کے لیے دو عسکری آپریشن دیکھے جا رہے ہیں۔ ان میں پہلی کارروائی شامی فوج روس کی معاونت سے کر رہی ہے جب کہ دوسری کارروائی واشنگٹن کی حمایت یافتہ سیریئن ڈیموکریٹک فورسز عمل میں لا رہی ہیں جو عرب اور کُرد جنگجوؤں پر مشتمل ہیں۔

المرصد کے مطابق بیک وقت ہونے والے داعشی حملوں میں شامی فوج اور اس کے ہمنوا مسلح عناصر کے کم از کم 58 اہل کاروں اور جنگجوؤں کے ہلاک ہونے اور درجنوں کے زخمی ہونے کی تصدیق ہو چکی ہے۔ ان افراد کا تعلق شام اور دیگر ممالک سے ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں