.

قطر کا معاملہ وزیر سے بھی کم درجے کا اہل کار دیکھ رہا ہے : سعودی ولی عہد

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان نے مصر میں میڈیا سے تعلق رکھنے والی شخصیات کے ساتھ ملاقات میں قطر کے بحران پر روشنی ڈالتے ہوئے کہا کہ "میں خود کو قطر کے بحران میں مشغول نہیں کر رہا۔ اس معاملے کو وزیر سے بھی کم منصب کا عہدے دار دیکھ رہا ہے۔ اس ملک کی آبادی مصر کی ایک شاہراہ کے برابر بھی نہیں۔ لہذا ہمارا کوئی وزیر بھی اس بحران کو حل کر سکتا ہے"۔

بن سلمان کا یہ موقف سعودی شاہی دفتر کے مشیر سعود القحطانی کی طرف سے سامنے آیا ہے۔ القحطانی نے اپنی ٹوئیٹس میں بتایا کہ "قطر کے معاملے کو سعودی وزارت خارجہ میں گریڈ 12 کا ایک اہل کار دیکھ رہا ہے"۔

القحطانی کے مطابق سعودی ولی عہد نے مصر میں میڈیا پرسنز کے ساتھ ملاقات میں امریکا کی کیوبا کے حوالے سے پالیسی کا بائیکاٹ کرنے والے چار عرب ممالک کی قطر کے حوالے سے پالیسی کے ساتھ موازنہ کیا۔

القحطانی نے اپنی ٹوئیٹ میں لکھا کہ "اس موازنے کے حوالے سے میرا جنابِ ولی عہد کے ساتھ ایک اختلاف ہے۔ وہ یہ کہ امریکا تو اپنی پالیسی کے سبب کیوبا کے سِگار سے محروم ہو گیا۔ البتہ ہم کسی چیز سے محروم نہیں ہوئے جب کہ قطر ہر چیز سے ہاتھ دھو بیٹھا۔ آخر کار وہ جزیرہ نما سے تبدیل ہو کر تنہا جزیرے کی حیثیت اختیار کر گیا۔