.

حوثی ملیشیا نے الحدیدہ میں فلور ملز پر ایک مرتبہ پھر گولہ باری شروع کر دی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن میں حوثی ملیشیا نے الحدیدہ شہر میں بحر احمر فلور ملز پر چار مارٹر گولے داغے جو غلے کے گوداموں سے چند میٹر کی دوری پر گرے۔ فلور ملز کی انتظامیہ نے عالمی خوراک پروگرام کے زیر انتظام گندم کے اس ذخیرے کی صفائی مکمل کرنے کے بعد وہاں محفوظ کی ہوئی ہے۔

یہ کارروائی کمپنی کے اس اعلان کے ایک ہفتے بعد عمل میں آئی ہے جس میں بتایا گیا تھا کہ مذکورہ فلور ملز کی بحالی اور از سر نو کام کرنے کا عمل 90 فیصد مکمل ہو چکا ہے۔ کمپنی حوثی ملیشیا کے زیر قبضہ علاقوں کے ضرورت مندوں میں 55 ٹن گندم تقسیم کرنے کی تیاری کر رہی ہے۔

گذشتہ چند ماہ کے دوران حوثی ملیشیا بحر احمر فلور ملز کو ایک سے زیادہ مرتبہ بم باری کا نشانہ بنا چکی ہے۔ اس کے نتیجے میں وہاں موجود گوداموں میں سے دو تباہ ہو گئے اور ان کے اندر موجود گندم برباد ہو گئی۔ یہ ذخیرہ 30 لاکھ افراد کو خوراک فراہمی کے لئے کافی تھا۔

حوثی ملیشیا ستمبر 2018 سے اب تک ایک سے زیادہ مرتبہ اقوام متحدہ کی ٹیم کو بحر احمر فلور ملز تک پہنچنے سے روک چکی ہے، یہ ملز یمنی حکومت کی فورسز کے زیر کنٹرول علاقے میں واقع ہے۔ حوثی باغیوں نے اقوام متحدہ کی ٹیم کو فائرنگ کا نشانہ بھی بنایا۔ بعد ازاں محدود تعداد میں ٹیم کے اہل کاروں کو رواں سال مئی میں فلور ملز پہنچنے کی اجازت دی گئی۔

ادھر عسکری اور زمینی ذرائع کا کہنا ہے کہ حوثی ملیشیا نے الحدیدہ شہر کے جنوب میں التحیتا ضلع میں مشترکہ یمنی فوسز کے ٹھکانوں پر بمباری میں اضافہ کر دیا ہے۔ اس دوران الحدیدہ شہر میں گھروں اور دکانوں کی چھتوں پر بھاری ہتھیار اور کاٹوشیا راکٹ کے لانچنگ پیڈز منتقل کر دیے گئے ہیں۔ مقامی آبادی نقل مکانی اور فرار ہونے پر مجبور ہو گئی ہے۔ حوثی ملیشیا نے متعدد گھروں کو ہتھیاروں کے گوداموں میں بدل ڈالا ہے۔

التحیتا ضلع میں پہاڑی علاقوں میں یمنی مشترکہ فورسز کے ٹھکانوں کو بھاری، درمیانے اور ہلکے ہتھیاروں سے گولہ باری کا نشانہ بنایا گیا۔

اس کے علاوہ مشترکہ یمنی مزاحمتی فورسز بدھ کے روز التحیتا ضلع کے شمال میں حوثیوں کے ایک مسلح نشانچی کو پکڑ لینے میں کامیاب ہو گئیں۔ یہ نشانچی مشترکہ مزاحمتی فورسز کے اہل کاروں اور عام شہریوں کو نشانہ بنا رہا تھا۔