’حجاج کرام کی قیام گاہوں کے حفاظتی نظام میں کوتاہی برادشت نہیں کی جائے گی‘

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب کے پبلک پراسیکیوشن نے عازمین حج کی رہائش گاہوں کی حفاظت اور ان کی سلامتی کے ضوابط کی خلاف ورزیوں پر سخت کارروائی کی وارننگ جاری کی ہے۔ حجاج کرام کی قیام گاہوں میں سلامتی اور حفاظت کے ضوابط کی خلاف ورزی پر قید اور جرمانے کی سزا ہوسکتی ہے۔ پبلک پراسیکیوشن کے مطابق حجاج کرام کی رہائش اعلیٰ ترین معیارات اور حفاظت کے ساتھ مشروط ہے۔ اس حوالےسے کسی قسم کی غفلت برتنے، عازمین کی سلامتی کو خطرے میں ڈالنے یا انہیں نقصان پہنچانے پر سخت تعزیری کارروائی کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے۔

سعودی پبلک پراسیکیوشن نے اتوار کو "ٹویٹر" پر اپنے آفیشل اکاؤنٹ کے ذریعےایک پوسٹ میں عازمین حج کی قیام گاہوں کی سہولیات میں آتش زدگی سے حفاظتی انتظامات میں دھوکہ دہی، تحفظ وسلامتی کے تقاضوں کی خلاف ورزی، یا حفاظتی منصوبوں میں انجینیرنگ دفاتر کو دھوکہ دینے کے خلاف خبردار کیا۔

اس کے علاوہ بیان میں حجاج کرام کی سہولیات کے حوالے سے تکنیکی یا تنظیمی ضوابط کی دفعات کی خلاف ورزی ، مینوفیکچرر کی طرف سے تجویز کردہ سہولت میں حفاظتی ذرائع کی دیکھ بھال میں دھوکہ دہی یا غفلت کے خلاف بھی خبردار کیا ہے۔

سعودی پبلک پراسیکیوشن اشارہ کیا کہ حفاظتی نظام، آلات اور ذرائع جو بین الاقوامی طور پر یا سعودی عرب میں منظور شدہ تکنیکی ضوابط یا معیارات کے مطابق نہیں ہیں۔ عازمین حج کی قیام گاہوں میں ان کی درآمد، فروخت یا انسٹال کرنا ممنوع ہے۔

پبلک پراسیکیوشن کا کہنا ہے کہ ممنوعہ آلات یا اس کا کوئی حصہ نصب کرنے کو ضوابط کی سنگین خلاف ورزی قرار دے کر ذمہ داروں کے خلاف سخت کارروائی عمل میں لائی جائے گی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں