فلسطین اسرائیل تنازع

جنگ بندی:فلسطینی مزاحمت کاروں نےغزہ سے غلطی سےاسرائیل کی جانب راکٹ داغ دیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

مصرکی ثالثی میں غزہ میں جنگ بندی کے باوجود فلسطینی مزاحمت کاروں نے اتوار کے روزجنوبی اسرائیل کی جانب ایک راکٹ داغ دیا ہے۔فلسطینی مزاحمتی تنظیموں کا کہنا ہے کہ یہ ایک ’تکنیکی غلطی‘تھی۔

اس راکٹ حملے کے کچھ ہی دیربعدغزہ کے شمالی علاقے میں دھماکوں کی آوازیں سنی گئی ہیں اور فلسطینیوں نے اطلاع دی ہے کہ اسرائیل نےعسکریت پسندوں کی ایک چوکی کوحملے میں نشانہ بنایا ہے۔دوسری جانب اسرائیلی فوج نے فوری طورپراس حملے پرکوئی تبصرہ نہیں کیا۔

غزہ سے راکٹ فائرہونے کے بعد سورج غروب ہونے سے ٹھیک پہلے اسرائیلی قصبوں میں سائرن بجنے لگے تھے۔مصر کی ثالثی میں جنگ بندی کے نفاذکے قریباً 20 گھنٹے بعد سرحد کے قریب رہنے والے مکینوں کوایک مرتبہ پھر محفوظ پناہ گاہوں میں بھیج دیا گیا۔ اسرائیلی فوج کا کہنا ہے کہ غزہ سے ایک ہی راکٹ داغا گیا تھا اوریہ ایک کھلی جگہ پرگرا تھا۔

غزہ میں فلسطینی مزاحمتی گروپوں کے مشترکہ آپریشن روم کے ایک ذریعے نے بتایا کہ راکٹ "تکنیکی خرابی کی وجہ سے" لانچ ہوگیا تھا۔دونوں جانب سے کسی کے زخمی ہونے کی اطلاع نہیں ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں