کریم خان 7 اکتوبر کو حماس کے حملے کے جواب میں اسرائیل کا دورہ کریں گے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

بین الاقوامی فوجداری عدالت (آئی سی سی) نے جمعرات کو کہا کہ عدالت کے چیف پراسیکیوٹر (اعلیٰ وکیلِ استغاثہ) کریم خان اسرائیل کا دورہ کر رہے ہیں جو وہ حملوں میں زندہ بچ جانے والے اسرائیلیوں اور غزہ سے 7 اکتوبر کے حماس کے حملوں کے متأثرین خاندانوں کی درخواست پر کر رہے ہیں۔

آئی سی سی نے بتایا کہ خان سینئر فلسطینی حکام سے ملاقات کے لیے مقبوضہ مغربی کنارے میں رام اللہ بھی جائیں گے۔

آئی سی سی نے کہا، یہ دورہ تفتیشی نہیں ہوگا اور مزید کہا، یہ "تمام متأثرین کے لیے اظہارِ ہمدردی اور بات چیت میں مشغول ہونے کے موقع کی نمائندگی کرتا ہے۔"

گذشتہ ماہ حماس کے حملوں کے متأثرین کے اسرائیلی خاندانوں نے آئی سی سی سے اپیل کی تھی کہ وہ ہلاکتوں اور اغوا کی تحقیقات کا حکم دے۔

اہلِ خانہ نے خان پر زور دیا تھا کہ وہ جنوبی اسرائیل میں حماس کی 7 اکتوبر کی کارروائیوں بشمول جبری گمشدگیوں پر تحقیقات پر توجہ مرکوز کریں جو عدالت کی نظر میں انسانیت کے خلاف جرم ہیں۔

اسرائیل نے کہا کہ حماس کے مزاحمت کاروں نے 1200 افراد کو ہلاک کر دیا اور 240 کو یرغمال بنا لیا۔ اس کے جواب میں اسرائیل نے ایک فضائی اور زمینی جوابی حملہ کیا۔ اس حملے میں فلسطینی محکمۂ صحت کے حکام کے مطابق غزہ کے 15,000 سے زیادہ باشندوں کی ہلاکت کی تصدیق کی گئی ہے جنہیں اقوامِ متحدہ قابل اعتماد سمجھتا ہے۔ مزید 6,500 لاپتہ ہیں اور کئی لوگوں کے ملبے تلے دبے ہونے کا خدشہ ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں