سعودی عرب : طیران الریاض کا اپنے فضائی بیڑے میں مزید بوئنگ شامل کرنے کا فیصلہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب کی ائیر لائن ' ریاض ائیر المعروف طیران الریاض نے اپنے فلیٹ میں بوئنگ کمپنی کے لمبے روٹس کے لیے بڑے طیاروں کی خریداری کرنے کا فیصلہ کیا اس فیصلے کا مقصد اپنے فضائی بیڑے کو بڑھاتے ہوئے اپنے مسافروں کو زیادہ سے زیادہ بہتر اور سہولت دینا ہے۔

ریاض ائیر کا یہ 'سٹارٹ اپ' اپنے آپ کو قطر ائیر اور امارات کے ساتھ مقابلے کی ایک فضائی کمپنی کے طور پر دیکھنا چاہتا ہے ، جس کے پاس بڑا فضائی بیڑا ہو اور دوسرے ملکوں میں اس کی طرف سے مسافروں کو لانے لے جانے کی بہترین طیاروں کے ساتھ سہولیات بہم ہوں۔

کمپنی کے سربراہ ٹونی ڈگلس نے اس سلسلے میں بلوم برگ ٹی وی کو انٹرویو دیتے ہوئے کہا ' ہمیں ایک بہت بڑے فضائی بیڑے کی ضرورت ہے، اس لیے یہ فیصلہ کیا گیا ہے۔ اس مقصد کے لیے ہم نئے بوئنگ کمپنی کے طیاروں کا آرڈر کرنے جا رہے ہیں۔ اور ممکن ہے ان تنگ باڈی کے طیاروں کے لیے آرڈر دینے کے بعد ہم مزید طیاروں کی خریداری کا اہتمام کریں۔ '

واضح رہے سعودی عرب کے دولت فنڈ کی مدد سے ریاض ائیر ایک سال کے دوران آپریشنز شروع کرنے کا ارادہ رکھتی ہے۔ کمپنی نے پچھلے سال 39 بوئنگ طیارے خرید لیے تھے۔

ڈگلس جو کمپنی کے سربراہ کے طور پر کام کر رہے ہیں اس سے پہلے ابو ظہبی کی اتحاد ائیر ویز کو دیکھتے تھے۔ انہیں اندازہ ہے کہ جہازوں کی ممکنہ تاخیر کی وجوہ ہو سکتی ہیں۔ کیونکہ بوئنگ اور ائیر بس قسم کے جدید طیارے مسافروں میں غیر معمولی طور پر پسند کیے جاتے ہیں ۔ اس لیے ان کی طلب مارکیٹ میں زیادہ ہے۔

تاہم بوئنگ کمپنی نے رواں سال جہاز کے ایک حادثے کے بعد سے اپنی پیداوار میں کمی اور معیار کو مزید اوپر لانے کی حکمت عملی اپنا رکھی ہے۔ڈگلس نے کہا بوئنگ طیارے امریکہ میں تیارہو رہے ہیں

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں