پاکستان اور سعودی عرب کا شعبۂ صحت میں تعاون بڑھانے پر تبادلۂ خیال

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

پاکستان کی قومی صحت کی خدمات کی وزارت نے اس ہفتے کہا کہ پاکستان اور سعودی عرب کے صحت کے سینئر حکام نے دونوں ممالک کے درمیان اس شعبے میں تعاون بڑھانے پر تبادلۂ خیال کیا۔

پاکستان نے گذشتہ ہفتے دو روزہ گلوبل ہیلتھ سکیورٹی سمٹ کی میزبانی کی جس کے دوران عالمی رہنماؤں، بین الاقوامی تنظیموں اور سول سوسائٹی کے کارکنان نے ایسے حل پر تعاون، مشغولیت اور اتفاقِ رائے کو فروغ دینے کے لیے بات چیت کی جو ایک محفوظ دنیا اور مستقبل کی صحت مند نسلوں کے لیے کردار ادا کریں۔

وزارتِ صحت نے سوشل میڈیا پلیٹ فارم ایکس (سابقہ ٹویٹر) پر کہا کہ پاکستان کے نگراں وزیرِ صحت ڈاکٹر ندیم جان اور سعودی نائب وزیر برائے صحتِ عامہ ڈاکٹر ہانی جوخدار کے درمیان ملاقات دو روزہ کانفرنس کے موقع پر ہوئی۔ پوسٹ میں مزید کہا گیا کہ ڈاکٹر جوخدار نے عالمی یومِ صحت سمٹ کی کامیابی سے میزبانی کرنے پر پاکستان کی تعریف کی۔

وزارت نے کہا، "ڈاکٹر ندیم جان پاکستان کے صحت کے وسیع وسائل پر زور اور پلازما تعاون میں پیش رفت کی تجویز دیتے ہوئے شعبۂ صحت میں تعاون بڑھانے کے خواہشمند ہیں۔"

وزارت نے کہا کہ ڈاکٹر جوخدار نے ایک محفوظ دنیا کے لیے پاکستان کے اقدام کو سراہتے ہوئے عالمی فورم کی دعوت پر شکریہ ادا کیا۔

پوسٹ میں کہا گیا، "دورہ کرنے والے وفد کو شاہ سلمان ہسپتال کی پیش رفت کے بارے میں بریفنگ دی گئی جو سعودی عرب کے تعاون سے ہونے والی ایک مشترکہ کوشش ہے۔"

پاکستان اور سعودی عرب کے درمیان صحت، دفاع، تجارت، معیشت اور دیگر اہم شعبوں میں تعاون جاری ہے۔ سعودی عرب 2.7 ملین سے زیادہ پاکستانی تارکین وطن کا گھر ہے جہاں سے پاکستان کو سب سے زیادہ ترسیلاتِ زر موصول ہوتی ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں