.

داعش مخالف جنگ، عراق کی ہرممکن مدد کریں گے: سعودی عرب

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

عراق میں متعین سعودی عرب کے سفیر نے کہا ہے کہ ان کا ملک عراق کو ہر اعتبار سے مستحکم دیکھنا چاہتا ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ بغداد کی جانب سے شدت پسند گروپ دولت اسلامیہ ’’داعش‘‘ کی سرکوبی کے لیے مدد کی درخواست کی گئی تو ریاض بھرپور تعاون کرے گا۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ سے گفت وگو کرتے ہوئے بغداد میں متعین سعوی سفیر ثامر السبھان نے کہا کہ سعودی عرب عراق کے ساتھ اچھے اور دوستانہ تعلقات کےقیام کا خواہاں ہے۔ دونوں ملکوں کو انتہا پسندی کے ایک جیسے چیلنجز کا سامنا ہے اور دو طرفہ مفادات کے تحفظ کے لیے بغداد اور ریاض ایک دوسرے کے قریب آسکتے ہیں۔

ایک سوال کے جواب میں سعودی سفیر کا کہنا تھا کہ ان کا ملک داعش کے خلاف جنگ کے لیے عراق کی ہرممکن مدد کے لیے تیار ہے۔ چونکہ عراق کی طرح سعودی عرب بھی دہشت گردی اور انتہا پسندی کے خلاف نبرد آزما ہے۔ اس لیے اگر داعش کے خلاف جنگ کے لیے بغداد کو سعودی عرب کی ضرورت محسوس ہوتی ہے تو ہم ہرممکن مدد کریں گے۔

امریکا کی جانب سے عراق کی مالی امداد کے مطالبے سے متعلق سوال کے جواب میں ثامر السبھان کا کہنا تھا کہ سعودی عرب پہلے ہی عراق کی ہرممکن مالی مدد کر رہاہے۔ حال ہی میں عراق کے شورش زدہ صوبے الانبار میں جنگ کے متاثرین کے لیے امدادی سامان کی نئی کھیپ سعودی عرب کی جانب سے بھجوائی گئی ہے۔ سعودی عرب کا امدادی آپریشن عراقی حکومت کے تعاون اور ہم آہنگی کے بعد کیا گیا۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ اپنے ذرائع کے حوالے سے بتایا ہے کہ گذشتہ جمعرات کو امریکی وزیرخارجہ جان کیری اور سعودی وزیر دفاع شہزادہ محمد بن سلمان کے درمیان ہونے والی ملاقات میں بھی عراق میں سیاسی استحکام اور امن وامان پر تبادلہ خیال کیا گیا۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ جان کیری اور شہزادہ محمد بن سلمان نے عراق میں سیاسی استحکام، امن وامان کے ساتھ ساتھ بیرونی دباؤ سے آزاد اور مکمل طور پر خود مختار مملکت کے طور پر اپنا سفرجاری رکھنے سے اتفاق کیا۔ اس موقع پر سعودی وزیر دفاع کا کہنا تھا کہ ہم عراق کی داخلی سلامتی اور خود مختاری کے خواہاں ہیں اور بغداد کو مکمل طورپر آزاد اور بیرونی دباؤ سے آزاد دیکھنا چاہتے ہیں۔

بعد ازاں سعودی عرب کے دورے پر آئے امریکی صدر براک اوباما نے بھی عراقی داخلی خود مختاری کی حمایت کی۔ انہوں نے کہا کہ عراق میں موجودہ سیاسی بحران ملک کا اندرونی معاملہ ہے اور امریکا اس میں کسی قسم کی مداخلت نہیں کرنا چاہتا۔ انہوں نے عراقی وزیراعظم حیدر العبادی کو بہترین اتحادی قرار دیا۔