یمن اور حوثی

یمنی حوثیوں کا تین دن کے لیے سعودی عرب پرحملے معطل کرنے کااعلان

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

یمن میں ایران کی حمایت یافتہ حوثی ملیشیا نے ہفتے کے روز سعودی عرب پرمیزائل اور ڈرون حملے تین دن کے لیے معطل کرنے کا اعلان کیا ہے۔

حوثیوں نے اپنے امن اقدام میں کہا ہے کہ اگر عرب اتحاد نے فضائی حملے بند کردیے اور بندرگاہوں پر عاید پابندیاں ختم کردیں تو یہ ایک پائیدارفیصلہ ہوسکتا ہے۔

حوثیوں کے سیاسی دفتر کے سربراہ مہدی المشاط نے ٹیلی ویژن پرنشرہونے والی تقریر میں کہا کہ اس گروپ نے یمن میں گیس پیدا کرنے والے علاقے مآرب میں زمینی جارحانہ کارروائیوں کوبھی تین دن کے لیے معطل کرنے کا اعلان کیا ہے۔

مشاط نے کہا کہ حوثی گروپ یمنی صدرعبدربہ منصور ہادی کے بھائی سمیت تمام قیدیوں کو رہا کرنے کوتیار ہے۔

یہ اعلان عرب اتحاد کے یمن کے ساحلی شہرالحدیدہ میں حوثیوں کے ٹھکانوں کے خلاف تازہ فضائی حملوں اور یمن کی الصلیف بندرگاہ کے قرب وجوار میں واقع اسلحہ کے گودام کو تباہ کرنے کے بعد کیا گیا ہے۔

اس سے قبل اتحاد نے حوثیوں کو الحدیدہ اورالصلیف کی بندرگاہوں اور صنعاءکے بین الاقوامی ہوائی اڈے سے تمام ہتھیارہٹانے کے لیے تین گھنٹے کی ڈیڈ لائن دی تھی۔

جمعہ کے روز حوثیوں نے مملکت کے خلاف 16 معاندانہ حملےکیے تھے اوران میں جدہ میں آرامکو کی تیل کی تنصیب پر بھی حملہ شامل ہے۔عرب اتحاد کے مطابق کسی بھی حملے میں ہلاکتیں نہیں ہوئی ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں