.

غزہ پر اسرائیل کے جارحانہ حملوں میں 80 فلسطینی شہید

غزہ خنجر کی نوک پر آ گیا ہے ،عالمی برادری جنگ بندی کرائے: بین کی مون

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

اسرائیلی فوج کی غزہ کی پٹی پر جاری وحشیانہ بمباری کے نتیجے میں گذشتہ تین روز کے دوران کم سے کم اسّی فلسطینی شہید ہوگئے ہیں اور بیسیوں عمارتیں تباہ ہوگئی ہیں۔

فلسطین کی وزارت صحت کی اطلاع کے مطابق غزہ کے جنوبی قصبے خان یونس میں جمعرات کی صبح اسرائیلی جنگی طیاروں نے بمباری کرکے دو مکانوں کو تباہ کردیا ہے اور اس حملے میں ایک ہی خاندان کے آٹھ افراد شہید ہوگئے ہیں۔ان میں پانچ بچے شامل ہیں۔خان یونس ہی میں ایک اور حملے میں ایک انیس سالہ نوجوان اور اس کا پچھہتر سالہ والد شہید ہوئے ہیں۔

اسرائیل کے جنگی طیاروں نے منگل سے غزہ کی پٹی کے مختلف علاقوں پر جاری جارحیت کے دوران جمعرات کو سب سے زیادہ فضائی حملے کیے ہیں اور تین سو سے زیادہ اہداف کو نشانہ بنایا ہے۔اسرائیل کی بمباری کی نتیجے میں آج اکتیس فلسطینی شہید ہوئے ہیں۔

اسرائیلی فوجی ترجمان پیٹر لرنر نے اس تازہ بمباری کا جواز فلسطینی مسلح تنظیموں کی جانب سے فائر کئے جانے والے راکٹوں کو بتایا ہے۔اسرائیلی ترجمان کا کہنا ہے'' گذشتہ رات کے دوران غزہ میں 322 اہداف کو نشانہ بنایا گیا جبکہ مجموعی طور پر اب تک 750 اہداف پر بمباری کی جا چکی ہے''۔ اس کے بقول اب تک 200 راکٹ اسرائیل کے مختلف قصبوں اور آبادیوں کی طرف فائر کیے جا چکے ہیں۔

تاہم اسرائیلی ترجمان نے واضح کیا ہے کہ ان راکٹوں کی وجہ سے اسرائیل کا کوئی جانی نقصان نہیں ہوا ہے۔ البتہ جنوبی اسرائیل کے علاقوں میں کاروبار بری طرح متاثر ہوا ہے۔ اس وجہ سے ہزاروں اسراِئیلی جنوبی علاقوں سے شمالی قصبوں کی طرف منتقل ہو گئے ہیں۔

حماس کے عسکری ونگ عزالدین القسام بریگیڈ نے کہا ہے کہ اس نے جمعرات کی صبح اسرائیل کے شہر حیفا پر چھے راکٹ فائر کیے ہیں۔ اس سے پہلے سمندر میں اسرائیلی کشتیوں پر بھی راکٹ فائر کیے جانے کی خبریں آچکی ہیں۔

اس صورت حال پر فلسطینی اتھارٹی کے صدر محمود عباس کے علاوہ امریکی وزیر خارجہ جان کیری اور اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل بین کی مون تشویش ظاہر کر چکے ہیں۔

بین کی مون نے کہا ہے کہ صورت حال خطرناک ہوتی جا رہی ہے، غزہ بالکل خنجر کی نوک پر آ گیا ہے اور تشدد نے غزہ کو اپنی لپیٹ میں لے لیا ہے۔ انھوں نے نیویارک میں اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کے ہنگامی اجلاس میں تقریر کرتے ہوئے فریقین سے جنگ بندی کی اپیل کی اور عالمی برادری پر زوردیا ہے کہ وہ غزہ میں تشدد کو رکوانے کے لیے ہر ممکن اقدام کرے۔