.

ہم امریکا کے ساتھ مل کر مشترکہ دشمنوں کے خلاف کام جاری رکھیں گے: الجبیر

سعودی عرب، امریکا نے کویت کی آزادی اور القاعدہ کے خلاف یمن میں قربانیاں دیں ہیں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کے وزیر مملکت برائے امور خارجہ عادل الجبیر کا کہنا ہے کہ امریکی صدر جو بائیڈن کے تاریخی خطاب کا خیر مقدم کرتے ہیں۔

سلسلہ وار ٹویٹس میں ان کا کہنا تھا کہ ’بائیڈن کے تاریخی خطاب نے یہ بات واضح کردی کہ امریکہ تنازعات حل کرنے اور چیلنجوں سے نمٹنے کے لیے اتحادیوں اور دوست ملکوں کے ساتھ مل کر کام کرے گا‘۔

الجبیر نے یہ بھی کہا کہ ’سعودی عرب تنازعات ختم کرانے اور چیلنجوں سے نمٹنے کے لیے امریکہ میں اپنے دوستوں کے ساتھ مل کر کام کرنے کا آرزو مند ہے۔ ’ہم امریکہ میں اپنے دوستوں کے ساتھ جدوجہد جاری رکھیں گے اور سات عشروں سے زیادہ مدت پر مشتمل اپنا ریکارڈ آگے بڑھائیں گے‘۔

عادل الجبیر نے کہا کہ ’سعودی عرب اور امریکہ نے کویت کو آزاد کرانے، شام میں داعش اور یمن میں القاعدہ سے جنگ کے دوران قربانیاں دی ہیں۔ مشترکہ دشمنوں کا مقابلہ کرنے کے لیے مشترکہ جدوجہد جاری رکھیں گے‘۔ انھوں نے کہا کہ امریکی صدر جو بائئڈن کی تقریر نے تنازعات کے حل کےلیے’ دوستوں اور اتحادیوں‘ کے ساتھ مل کر کام کرنے کے امریکی عزم کا اعادہ کیا ہے۔

یاد رہے کہ سعودی عرب نے جو بائیڈن کے اس خطاب کا خیر مقدم کیا تھا جس میں انہوں نے اس عزم کا اظہار کیا تھا کہ امریکہ سعودی عرب کے ساتھ خودمختاری کے دفاع اور خطرات سے نمٹنے کے سلسلے میں تعاون کرے گا۔