فلسطین اسرائیل تنازع

اسرائیلی فوج کی غزہ کی پٹی کے ہسپتالوں پر شدید بمباری، اموات میں مزید اضافہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

فلسطین کے علاقے غزہ کی پٹی پر مسلط کی گئی اسرائیلی جارحیت کے دوران قابض فوج بے رحمی کے ساتھ ہسپتالوں پر بم گرا رہی ہے جس کے نتیجے میں نہتے فلسطینیوں کی اموات میں تیزی کے ساتھ اضافہ ہو رہا ہے۔

اسرائیلی فوج نے کل ہفتے کو غزہ کی پٹی کے متعدد علاقوں پر بمباری تیز کردی جس سے ہسپتال اور صحت کی سہولیات متاثر ہوئیں۔ سات اکتوبر سے جاری وحشیانہ فضائی حملوں کے نتیجے میں غزہ میں ہلاکتوں کی تعداد 2215 ہوگئی جب کہ 8714 زخمی ہوگئے۔

بمباری میں غزہ کی پٹی کے ہسپتالوں کو نشانہ بنایا جا رہا ہے۔ ڈاکٹرز ود آؤٹ بارڈرز کے مطابق اسرائیلی بمباری میں ہسپتال بھی محفوظ نہیں رہے ہیں۔

انسانی حقوق گروپ نےغزہ کے رہائشیوں کو تحفظ دینے پر زور دیا۔ تنظیم کا کہنا ہے کہ ہسپتالوں میں طبی سامان کی شدید قلت ہے۔

دوسری طرف تنظیم کے نمائندے علا الجعبری نے العربیہ اور الحدث کے ساتھ بات کرتے ہوئے کہا کہ ہسپتالوں پر اسرائیلی بمباری کا کوئی جواز نہیں۔ انہوں نے طبی سہولیات پر اسرائیل کے پرتشدد حملوں کو روکنے کے لیے فوری مداخلت کا مطالبہ کیا۔

کل ہفتے کو تنظیم نے غزہ کی پٹی میں "اندھا دھند قتل" کے خاتمے، ہسپتال خالی کرنے کی وارننگ واپس لینے اور صحت کی دیکھ بھال کی سہولیات اور شہریوں کے تحفظ کا مطالبہ کیا۔

اس نے X پلیٹ فارم (سابقہ ٹویٹر) پر کہا کہ العودہ ہسپتال کے کچھ طبی عملہ اور تمام مریض ہسپتال چھوڑ چکے ہیں، لیکن صورتحال اب بھی بہت پیچیدہ اور افراتفری کا شکار ہے"۔

خیراتی طبی تنظیم نے کہا تھا کہ اسرائیل نے ہسپتال کو خالی کرنے کی ضرورت سے خبردار کیا تھا جب کہ پیرامیڈیکس اب بھی مریضوں کا علاج کر رہے تھے۔

غزہ کے ہسپتالوں کے مناظر

اردن کے ہسپتال کو نشانہ بنایا

متعلقہ تناظر میں غزہ میں اردنی فیلڈ ہسپتال کو اسرائیلی بمباری سے نقصان پہنچا جس کی وجہ سے وہ سروس سے محروم ہو گیا۔ اس کی طرف جانے والی سڑکیں منقطع ہو گئیں جبکہ فلسطینی وزارت صحت نے مطالبہ کیا کہ اردنی ہسپتال غزہ سے نہ نکلے۔

اس کے علاوہ فلسطینی پناہ گزینوں کے لیے اقوام متحدہ کی ریلیف اینڈ ورکس ایجنسی (اونروا) نے کہا کہ صرف گذشتہ 12 گھنٹوں کے دوران غزہ کی پٹی میں لاکھوں افراد بے گھر ہوئے۔ پٹی کے جنوبی حصوں میں نقل مکانی کا عمل جاری ہے۔

ایک ملین سے زیادہ لوگ بے گھر ہوچکے

انہوں نے ایک بیان میں مزید کہا کہ غزہ کی پٹی میں فوجی کارروائیوں کے نتیجے میں بے گھر ہونے والے افراد کی تعداد ایک ہفتے کے اندر تقریباً 10 لاکھ افراد تک پہنچ گئی۔

بیان میں یہ بھی کہا گیا ہے کہ ایک ہفتے سے غزہ میں انسانی امداد کی فراہمی کی اجازت نہیں دی گئی ہے۔

اونروا کے کمشنر جنرل فلپ لازارینی نے آبادی کو پانی فراہم کرنے کے لیے پٹی میں ایندھن پہنچانے کا مطالبہ کیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں