مسجد نبوی کے قریب دھماکے اسلام کے قلب پرحملہ ہے:سینٹ

پاکستان میں سعودی عرب سے یکجہتی کے لیے ملک گیر تحریک کا اعلان

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

پاکستان کے ایوان بالا[سینٹ] میں سعودی عرب میں ہونے والی دہشت گردی کی کارروائیوں کی مذمت میں ایک قرارداد منظور کی گئی۔ ایوان میں پیش کی گئی قرارداد کی تمام ارکان کی جانب سے متفقہ طورپر حمایت کی گئی۔ قرارداد میں رمضان المبارک کے آخری ایام میں مدینہ منورہ میں مسجد نبوی کے قریب دہشت گردانہ کارروائیوں کی شدید الفاظ میں مذمت کی گئی۔ قرارداد میں کہا گیا ہے کہ روضہ رسول صلی اللہ علیہ وسلم کے قریب دہشت گردی کا واقعہ اسلام کےقلب پرحملے کے مترادف ہے۔ دہشت گردی کا کوئی دین و مذہب نہیں۔ اسلام اس طرح کے واقعات کی شدید مذمت کرتے ہوئے دہشت گردی کی ہرصنف کے خلاف پوری قوت سے جنگ کی تقلین کرتا ہے۔

قرارداد میں کہا گیا کہ مدینہ منورہ اور سعودی عرب میں دیگر مقدس مقامات پر حملے شعائر اسلام پرحملوں کے متراف ہیں۔ پاکستانی قوم اور پوری مسلم امہ دہشت گردی کی کارروائیوں میں سعودی عرب کی حکومت کے ساتھ کھڑے ہیں۔

ادھر دوسری جانب پاکستان میں مرکزی جمعیت اہل حدیث نے سعودی عرب کے ساتھ یکجہتی کے لیے ملک گیر مہم چلانے کا اعلان کیا ہے۔ لاھور میں جمعیت اہل حدیث کے مرکزمیں منعقدہ اجلاس میں جماعت کے امیر پروفیسر ساجد میر کی قیادت میں سعودی عرب کی حمایت میں ملک گیر تحریک چلانے کا اعلان کیا گیا۔ اجلاس میں سعودی عرب میں دہشت گردی کے واقعات کی شدید الفاظ میں مذمت کی گئی اور پاکستانی حکومت سے بھی مطالبہ کیا گیا کہ وہ دہشت گردی کے خلاف جنگ میں ریاض کے ساتھ مکمل تعاون کرے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں