تعز میں حوثی باغیوں کے مراکز پر بمباری، متعدد ٹھکانے تباہ

حوثی ملیشیا اور علی صالح کے حامیوں کے ہاتھوں عدن میں قتل عام

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

یمن میں حوثی باغیوں کے خلاف سعودی عرب کی قیادت میں’’فیصلہ کن طوفان‘‘ آپریشن جاری ہے۔ تازہ اطلاعات کے مطابق جنگی طیاروں نے جنوبی یمن کے تعز شہر میں حوثیوں کے متعدد مراکز پر بمباری کی ہے جس کے نتیجے میں متعدد ٹھکانے تباہ ہو گئے ہیں۔

ادھر جنوبی یمن کے عدم شہر میں حوثی ملیشیا اور سابق صدر علی صالح کے حامی ری پبلیکن گارڈز نے شہریوں کا وحشیانہ قتل عام کیا ہے۔

بدھ کے روز ’’الحدث‘‘ ٹیلی ویژن چینل نے اطلاع دی تھی کہ حوثی ملیشیا اور سابق صدر علی صالح کے حامی گروپوں نے عدن میں کریتر کے مقام پر شہریوں کا قتل عام کیا ہے۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ حوثی شدت پسندوں نے عدن کا بیشتر حصہ خالی کردیا ہے تاہم جنگی طیاروں کی جانب سے جبل المعاشیق اور اس کےمضافات میں بمباری جاری رکھی ہوئی ہے تاکہ حوثی دوبارہ اپنے قدم نہ جما سکیں۔

عدن سے ملنے والی اطلاعات میں بتایا گیا ہے کہ العند فوجی اڈے کے آس پاس گھمسان کی لڑائی جاری ہے۔ دارسعد کے مقام پر حوثیوں نے ٹینکوں کے ذریعے گولہ باری کی ہے۔ اس کے المنصورہ میں علاوہ شاہراہ 90 اور شاہراہ 50 پرگولہ باری سے متعدد افراد ہلاک اور زخمی ہوئے ہیں۔ حوثیوں کی جانب سے مسلسل گولہ باری کی وجہ سے متاثرہ علاقوں میں طبی ٹیموں کی رسائی نہیں ہو سکی اور نہ ہی زخمیوں کو اسپتال پہنچانے کا کوئی انتظام ہے۔

ادھر صنعاء میں بھی حوثیوں کے سیاسی ہیڈکواٹرز پر اتحادی طیاروں نے بمباری کی ہے۔ گذشتہ چوبیس گھنٹوں کے دوران ’’فیصلہ کن طوفان‘‘ آپریشن کے دوران لحج میں العند فوجی اڈے اور لود میں بریگیڈ 115 کے مرکز متعدد بار بمباری کی گئی جس کے نتیجے میں حوثیوں اور علی صالح کےحامیوں کی لاجسٹک سپلائی لائن تباہ ہو گئی ہیں۔

عدن سے ملنے والی اطلاعات کے مطابق شہر کے بعض مقامات پر متحارب گروپوں میں دو بہ دو لڑٖائی جاری ہے۔ حوثیوں نے مخالفین کے رہائشی علاقوں پر بھاری توپخانے سے گولہ باری کی ہے جس کے نتیجے میں دسیوں افراد کے ہلاک اور زخمی ہونے کی اطلاعات ہیں۔

حوثیوں کی جانب سے العیدروس کالونی میں عام شہریوں کے گھروں پر گولے داغے گئے جس کے نتیجے میں کئی گھروں سے آگ کےشعلے اور دھوواں اٹھتا دکھائی دیا ہے۔ کالونی کے مکینوں کا کہنا ہے کہ حوثی چن چن کر شہریوں کو نشانہ بنا رہی ہے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں