قطر میں کوئی انسانی حقوق نہیں : جیل میں بند شاہی خاندان کی شخصیت کی اہلیہ کی دُہائی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
5 منٹس read

قطر کے شاہی خاندان کی شخصیت شیخ طلال بن عبدالعزیز بن احمد بن علی آل ثانی کی اہلیہ نے کہا ہے کہ قطری نظام نے ان کے خاوند کو انتقاماً جیل میں ڈال رکھا ہے اور اس طرح ان اور ان کے چار بچوں کے بنیادی انسانی حقوق کی خلاف ورزی کی جارہی ہے اور انھیں بنیادی شہری ضروریات سے بھی محروم رکھا جارہا ہے۔

انھوں نے جنیوا پریس کلب میں ایک کانفرنس میں گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ قطری نظام نے ان کے خاندان کی زندگیاں اجیرن کررکھی ہیں ، انھیں بنیادی صحت اور تعلیم کی سہولتوں سے محرم رکھا جارہا ہے اور رہنے کے لیے ایسا گھر دیا ہے جس میں بنیادی سہولتیں بھی دستیاب نہیں ہیں۔

انھوں نے قطری نظام پر الزام عاید کیا ہے کہ اس نے بچوں کو ذہنی اور جسمانی تشدد کا نشانہ بنا یا ہے اور اس طرح جیل میں بند ان کے والد کو نفسیاتی اور ذہنی تشدد کا شکار کرنے کی کوشش کی ہے۔اگر قطر میں کوئی انسانی حقوق پائے جاتے تھے تو اب ان کا کوئی عملی وجود نہیں رہا ہے۔

ریان نے مزید بتایا کہ انھیں حمل کی حالت میں ان کے گھر سے زبردستی بے دخل کردیا گیا تھا اور ان کے پاس کوئی مالی وسیلہ بھی نہیں تھا۔پھر انھیں جس مکان میں منتقل کیا گیا وہاں کیڑے مکوڑے تھے جن کی وجہ سے ان کے بچے بیمار پڑ گئے تھے اور انھیں علاج تک رسائی حاصل نہیں تھی۔

وہ بتاتی ہیں کہ قطر کے شاہی خاندان کے درمیان تنازع میں شدت شیخ عبدالعزیز بن احمد کی وفات کے بعد آئی تھی۔وہ قطر کے بانیوں میں سے ایک تھے اور ان کا 2008ء میں سعودی عرب میں جلا وطنی کی حالت میں انتقال ہوا تھا۔اس کے بعد ان کے بیٹے شیخ طلال کے وہ تمام اثاثے منجمد کر لیے گئے جو انھیں وراثت میں ملے تھے۔رقم اور جائیداد ضبط ہوجانے کے بعد وہ اپنے ذمے واجب الادا قرضے کی رقوم ادا نہیں کرسکے تھے اور انھیں گرفتار کر کے جیل میں ڈال دیا گیا۔

اسماء ریان نے بتایا کہ ’’ ان کے خاوند کو ایک سازش کے تحت مقدمات میں پھنسایا گیا ،ان سے چیکوں پر دست خط لیے گئے لیکن وہ کیش نہ ہونے کے بعد انھیں بآسانی جیل میں ڈال دیا گیا تھا‘‘۔انھوں نے یہ بھی انکشاف کیا ہے کہ قطری رجیم نے ان کے خاوند سے ایسے کاغذات سے بھی دست خط لینے کی کوشش کی تھی جن میں انھیں ذہنی معذور اور فاتر العقل قرار دیا گیا تھا لیکن انھوں نے اپنے خاوند کو ایسا کرنے سے منع کیا تھا۔

ان کا کہنا تھا کہ ان کے خاوند شیخ طلال نے جب اپنے حقوق کا مطالبہ کیا تو قطری نظام نے انصاف دینے کے بجائے الٹا انھیں پسِ دیوار زنداں کردیا ۔

شیخ طلال شیخ احمد بن علی آل ثانی کے پوتے ہیں۔ ان کے دادا 1960ء سے 1972ء تک قطر کے امیر رہے تھے۔ان کے بیٹے شیخ احمد کو ان کے چچا زاد شیخ خلیفہ بن حمد نے معزول کردیا تھا اور خود امیر قطر بن گئے تھے ۔ شیخ خلیفہ موجودہ امیرِ قطر شیخ تمیم بن حمد آل ثانی کے دادا تھے۔

https://youtu.be/m4S8VG71GLg
مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں