.

یمن : عدن سے 11 لاشیں برآمد.. تعز میں شدید جھڑپیں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن کے جنوبی شہر عدن کے ایک علاقے میں 11 ذبح کیے ہوئے افراد کی لاشیں ملی ہیں جہاں شدت پسند گروپ اب بھی سرگرم ہیں۔ سکیورٹی ذرائع کے مطابق یہ سربریدہ لاشیں منگل کی شب مقامی آبادی کے سامن برآمد ہوئیں۔

پولیس نے واضح کیا کہ مذکورہ افراد کو تقریبا ایک ماہ قبل قتل کر کے پھینکا گیا۔

یاد رہے کہ یمنی حکام نے 2015 کے موسم گرما میں عدن کو حوثی ملیشیاؤں سے آزاد کرانے کے بعد اسے ملک کا عبوری دارالحکومت قرار دیا تھا۔ یمن کے دارالحکومت صنعاء پر حوثی باغیوں کا کنٹرول ہے۔

تعز میں شدید جھڑپیں

دوسری جانب حوثی اور معزول صالح کی ملیشیاؤں نے بدھ اور جمعرات کی درمیانی شب تعز شہر میں رہائشی علاقوں کو شدید گولہ باری کا نشانہ بنایا۔

اس کے علاوہ تعز شہر کے فضائی دفاع کے کیمپ کے اطراف سرکاری فوج اور عوامی مزاحمت کاروں کی باغی ملیشیاؤں کے ساتھ گھمسان کی جھڑپیں ہوئیں۔ جھڑپوں سے قبل ان ملیشیاؤں نے سرکاری فوج اور عوامی مزاحمت کاروں کے ٹھکانوں پر حملے کیے تھے۔